ناپاکی میں سحری کرنا اگر سحری کے وقت انسان ناپاکی کی حالت میں اُٹھے اور نہانے کا وقت نہ ہو

اگر کسی شخص کو رمضان میں رات کو احتلام ہو جائے، اور اس پر غسل واجب ہو، اور وہ بغیر غسل کئے اسی حالت میں سحری کر لے، تو کیا اس طرح سحری کرنا صحیح ہے؟واضح رہے کہ اگر کسی شخص پر غسل واجب ہو، اور وہ صبح صادق سے پہلے غسل نہ کرسکا، اور سحری کرکے روزہ رکھ لیا، تو اس کا روزہ درست ہے، ناپاک ہونے کی وجہ سے روزہ پر کوئی فرق نہیں پڑے گا، البتہ جلد از جلد غسل کرلینا چاہیے، غسل میں اتنی تاخیر کرنا کہ فجر کی نماز قضا ہوجائے، سخت گناہ کا باعث ہے۔اگررمضان میں شہ وت کی وجہ سے مذی یا وہ پانی جو کہ شہ وت کی وجہ سے مر د کے عضو ئے خاص سے نکل آئے تو کیاایسی حالت میں روزہ ٹوٹ جاتاہے؟ اگر ٹوٹ جاتاہے تو کیا کیا کفارہ ہے؟ اگر رات میں احتلام ہوجائے یا بیوی سے صحبت کی اور سوگئے یا کسی بھی وجہ سے غسل جنابت واجب ہوگیا، اور سحری کے وقت غسل کا وقت نہیں، تو کیا روزہ رکھ لینے کے بعد غسل کریں

تو کیا حلق تک پانی ڈالنا ضروری ہے؟ کیا حلق تک پانی جانے سے روزہ ٹوٹ جائے گا؟ جمعہ کے دن غسل کرنا سنت ہے؟روزہ کی حالت میں جمعہ کے دن غسل کریں گے (سنت کے لیے)تو حلق میں پانی ڈالنا کیسا ہے؟ کیا رمضان کے مہینہ میں رات کو بیوی سے ہ م ب س ت ر ی کرسکتے ہیں؟شہ وت پیدا ہوکر مذی یا منی نکل جائے تو روزہ نہیں ٹوٹتا البتہ مش ت زنی کی اور انزال ہوگیا تو روزہ ٹوٹ جائے گا اور اس میں قضاء واجب ہے، کفارہ واجب نہیں۔صبح صادق کے بعد غسل کیا تو غرارہ نہ کرے بلکہ کلی کرلینا کافی ہے، اگر غرارہ کیا اور حلق میں پانی چلاگیا تو روزہ ٹوٹ جائے گا۔اس میں بھی غرارہ نہ کرے بلکہ کلی کرلینے پر اکتفاء کرے۔رمضان المبارک میں صبح صادق سے قبل شب میں بیوی سے ہ م ب س ت ر ی جائز ہے۔اگر کسی شخص پر غسل واجب ہو اور وہ صبح صاد ق سے پہلے غسل نہ کرسکا اور سحری کرکے یا بغیر سحری کیے نیت کرکے روزہ رکھ لیا تو اس کا روزہ درست ہے، ناپاک ہونے کی وجہ سے روزہ پر کوئی فرق نہیں پڑے گا،

البتہ جلد از جلد غسل کرلینا چاہیے، غسل میں اتنی تاخیر کرنا کہ فجر کی نماز قضا ہوجائے گناہ کا باعث ہے۔باقی ناپاکی کی حالت میں سحری کرنا منع نہیں ہے، البتہ بہتر ہے کہ غسل وغیرہ کرکے سحری کی جائے ، اگر غسل کا وقت نہ ہو یا کوئی عذر ہو تو کلی وغیرہ کرکے سحری کرلینی چاہیے، نیز سحری کرنا سنت ہے، اگر کسی وجہ سے سحری نہ کی ہو تو سحری کے بغیر بھی روزہ ہوجاتا ہے، لہذا صورتِ مسئولہ میں اگر آپ نے بغیر سحری کے روزہ رکھ لیا تو آپ کا روزہ درست ہوجائے گا۔اللہ ہم سب کا حامی وناصر ہو۔آمین

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.