جوان لڑکی جب مور کی ہڈی کی راکھ اپنی چھاتیوں پر مل دے تو کیا ہوگا؟لازمی پڑھیں حیران کن بات جو آج تک معلوم نہ تھی

اگر کوئی انسان مور کا پتہ کھا لے تو وہ پاگ۔ل ہوجائے گا اگر مور کی بیٹھ مسوڑوں پر مل دی جائے تو تمام دانت گر جائیں گے۔ ماہرین حیوانات نے لکھا ہے کہ اگر کسی کو جانور نے کاٹ لیا ہو اگر اس جگہ مور کا پتہ لگایا جائے تو اسکے اثرات جلد ختم ہوجائیں گے اگر کوئی جوان لڑکی مور کی ہٹی کی راکھ لے کر چھاتیوں پر مل دے تو چھاتیاں ختم ہوجائیں گی ۔

جوان مور معدہ کے مریضوں کے لئے بہت فائدہ مند ہوتا ہے ماہرین حیوانات نے لکھا ہے کہ آرام طلب افراد کے لئے مور کا گوشت نقصان دہ ثابت ہوتا ہے کیونکہ تمام پرندوں میں مور سخت اور دیر سے ہضم ہوتا ہے مور گرم مزاج والوں کے لئے بہت مفید ثابت ہوتا ہے اگر کسی جوان لڑکے کے چہرے پر چھائیاں ہوں اگر وہ لڑکی مور کی بیٹھ اپنے چہرے پر مل دے تو چھائیاں جلد ختم ہوجائیں گی بہترین نسل کے مور کی دم کی لمبائی پانچ فٹ سے زیادہ ہوتی ہے مور کے پیروں سے تیل بنایا جاتا ہے لوگ کہتے ہیں کہ اس تیل سے گنٹھیا کے مریضوں کا علاج کیاجاتا ہے ماہرین حیوانات کے مطابق اگر مور کی ہڈی کا گودا کسی کے پاس ہو تو اس پر نگاہ بد کا اثر نہیں ہوتا ۔

تو یہ ایک اچھا فائٹر ثابت ہوتا ہے۔مور گیارہ قسم کی مختلف آوازیں نکالتا ہے وہ آپس میں بات چیت ان آوازوں کے ذریعے کرتے ہیں مور زیادہ دیر تک ہوا میں نہیں اڑ سکتا لیکن اس کے باوجود یہ اچھی اڑان بھر نے کی صلاحیت رکھتا ہے حیران کن بات تو یہ ہے کہ زمیں پر مور دس میل فی گھنٹہ کی رفتار سے دوڑ سکتا ہے بعض لوگ کہتے ہیں کہ جب مور اپنی مادہ سے ملاپ کا عمل کرتا ہے تو مور اپنے آنسو مادہ کی آنکھ میں گرا دیتا ہے جس سے مادہ حاملہ ہوجاتی ہے اس کے علاوہ لوگ یہ بھی کہتے ہیں

کہ جب مورنی مور سے ملاپ نہیں کرتی تب نر مور اپنے کسی نر مور کے ساتھ تعلق قائم کر لیتا ہے مور اپنے پاؤں دیکھ کر بہت روتا ہے مور کو کھیلنا بہت اچھا لگتا ہے اور نر اپنی مادہ سے چھپن چھپائی والا کھیل کھیلنا زیادہ پسند کرتا ہے مور کی خوراک میں گھاس پودے پھول پھل اور حشرات الارض شامل ہیں حسن و جمال کے باوجود بعض لوگ مور کو منحوس خیال کرتے ہیں کیونکہ حضرت آدم ؑ کے جنت سے خروج کا سبب مور تھا جس نے جنت میں ابلیس کے داخلے کی راہ پیدا کی ۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.