کیا آپ کے ہاتھ پاؤں بھی سردیوں میں کالے اور سخت ہوجاتے ہیں؟ تو ان طریقوں پر عمل کریں اور ہاتھ پاؤں کو خوبصورت بنائیں

سردیوں میں کم درجہ حرارت کی وجہ سے جسم میں خون کی روانی کی رفتار کم ہوجاتی ہے۔ جس کی وجہ سے خلیوں کو آکسیجن صحیح سے نہیں پہنچتی ہے۔* اسکن کے خلیات کو بھی آکسیجن کی ضرورت ہوتی ہے اور کمی کے باعث اسکن پر واضح فرق پڑتا ہے جس کی وجہ سے اسکن سخت اور بدرنگ ہوجاتی ہے۔سردیوں میں جب ٹھنڈی ہوا بار بار جسم سے ٹکراتی ہے تو اسکن خشک اور کھردری ہوجاتی ہے۔

* اس کے علاوہ اسکن کی ڈیپ صفائی کریں اور ہفتے میں دو بار لازمی ہاتھ پاؤںکی اسکربنگ کریں کیونکہ موسچرائزنگ بھی ہاتھ پاؤں کے لیے اہم ہے۔ آپ کی جلد کو جتنی نمی ملے گی یہ اتنا ہی سخت ہونے اور جھریاں پڑنے سے محفوظ رہے گی۔ * کپڑے دھوتے وقت ہمیشہ ربڑ کے دستانوں کا استعمال کیا کریں یا پھر نیم گرم پانی کا استعمال لازمی کریں۔ * کپڑے یا برتن دھونے کے بعد عرق گلاب، لیموں اور گلیسرین کا گھریلو موسچرائزر بھی لگائیں۔ * کیوٹیکلز کو نرم رکھنے کے لیے زیتون کے تیل میں وٹامن ای آئل ملا کر رات کو سوتے وقت ناخنوں کے اطرافپہ مالش کریں ایسا کرنے سے کیوٹیکلز نرم رہیں گے اور ناخنوں کی ارد گرد سطح صاف رہے گی۔ * سردیوں میں چونکہ ناخنوں میں میل جمنے کا خطرہ رہتا ہے اس لیے اپنے ناخن چھوٹے رکھیں تاکہ وہ صاف اور دلکش لگیں۔ * سردیوں میں رات کو کوئی بھی کریم یا پیٹرولیم جیلی لگا کر کر موزے اور دستانے پہن کر سوئیں۔ پھر صبح نیم گرم پانی اور کسی سوپ کی مدد سے ہاتھ پاؤں اچھی طرح دھولیں کیونکہ ایسی چیزیں دھول مٹی اپنی طرف کھینچتی ہیں اس لیے اگر صحیح سے نہیں دھوئیں گی تو ہاتھ ہاؤں میلے اور کالے نظر آئیں گے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.