اپوزیشن رہنماؤں کے لیے جلسے میں شرکت کرنا مشکل ہوگیا مگر کیوں؟ جان کر آپ بھی کپتان کی سیاست کو داد دیں گے

لاہور (نیوز ڈیسک ) مسلم لیگ ن 16 اکتوبر کو گجرانوالہ میں سیاسی قوت کا مظاہرہ کرے گی۔مسلم لیگ ن کی جانب سے جلسے کی بھرپور تیاریاں کی جا رہی ہیں،کارکنان میں خاصا جوش وخروش بھی پایا جا رہا ہے۔ مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے کہ کارکن 16اکتوبر تک

گھروں میں نہ سوئیں، گرفتاریوں سے بچیں، حکومت جلسے سے خوفزدہ ہوکر پکڑ دھکڑ شروع کردی، گوجرانوالہ جلسہ ہر صورت کامیاب ہوگا۔تاہم ایسے میں حکومت کی جانب سے بھی ایک اہم اقدام سامنے آیا ہے ۔حکومت نے 16 اکتوبر کو قومی اسمبلی کا اجلاس طلب کر لیا ہے جس کا وقت بھی شام کا ہے۔اسی حوالے سے نیر صحافی غریدہ فاروقی کا کہنا ہے کہ حکومت نے کمال چالاکی سے قومی اسمبلی اجلاس 16 اکتوبرکو رکھا ہے۔شام کا سیشن طلب کیا جب کہ اسی دن گوجرانوالہ جلسہ ہے۔اب ن لیگ پیپلز پارٹی دیگر اپوزیشن جماعتوں کے ایم این ایز جلسے میں جائیں گے یا قومی اسمبلی میں۔۔حکومت تنقید کیلئے فائدہ بھی اُٹھا سکتی ہے کہ پارلیمان کی بجائے سڑکوں پر عوامی مسائل حل کیے جا رہے ہیں۔دوسری جانب پاکستان مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نوازنے کہاہے کہ حکومت گوجرانوالہ جلسے سے خوفزدہ ہو گئی ہے ،16اکتوبر کو ہر صورت جلسہ ہوگا اس لئے بھرپور تیاریاں کی جائیں ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے مرکزی سیکرٹریٹ ماڈل ٹائون میں’’ووٹ کو عزت دو پاسبان ‘‘بننے والے پی پی 162 کے کارکنان کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔مریم نواز نے کہا کہ پاسبان رضا کار جلسے کو کامیاب بنانے کیلئے لوگوں کو ساتھ ملائیں،حکومت کے اوچھے ہتھکنڈوں کی ویڈیوز بنا کر سوشل میڈیا پر عوام کو حقائق دکھائیں۔ ذرائع کے مطابق مریم نواز نے پاسبان رضا کاروں کو ممکنہ گرفتاریوں سے بچنے کی ہدایت کی ۔مسلم لیگ ن کے رہنماؤں کا کہنا ہے کہ حکومت 16اکتوبر کے جلسہ سے بوکھلاہٹ کا شکار ہے عوام کو مہنگائی کی دلدل میں نہیں پھنسنے دیں گے۔ مسلم لیگ (ن) پنجاب کے صدر رانا ثنا اللہ خان نے کہا ہے کہ عوام 16اکتوبر کو گوجرانوالہ میں نا اہل اور نالائق ٹولے کو الوداع کہیں گے۔ عوام حکومت کی ڈھائی سالہ کارکردگی پرلعنت بھیج رہے ہیں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.