یہ کہیں پھر اپنی بات سے مُکر نہ جائیں۔۔۔!! اپوزیشن جماعتوں نے مسلم لیگ (ن) کو پکا کرنے کیلئے کیا گارنٹی مانگ لی؟ حیران کُن انکشاف

اسلام آباد(ویب ڈیسک) پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے سربراہی اجلاس میں ہونے والے فیصلوں کو تحریری طور پر بھی محفوظ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ نجی ٹی وی نیوز کے مطابق انتہائی ذمہ دار ذرائع کا کہنا ہے کہ پی ڈی ایم کے سربراہی اجلاس میں ہونے والے

فیصلوں کو تحریری طور پر محفوظ کرنے کا فیصلہ اس لیے کیا گیا ہے کہ اپوزیشن جماعتوں کا فیصلے سے منحرف ہونے کا خدشہ ہے۔ ذرائع کے مطابق تحریری طور پر محفوظ فیصلوں کی موجودگی میں کسی بھی جماعت کے لیے انحراف اس قدر آسان نہ ہو گا۔ اس ضمن میں ذمہ دار ذرائع نے بتایا ہے کہ پی ڈی ایم کا پہلا باضابطہ سربراہی اجلاس 15 اکتوبر کو ہو گا۔ ذرائع کے مطابق تحریری فیصلوں کی کاپیاں تمام جماعتوں کے پاس ہوں گی۔ ذرائع کے مطابق یہ فیصلہ بھی کیا گیا ہے کہ پی ڈی ایم کے سربراہی اجلاس میں کی جانے والی گفتگو بھی تحریری طور پر محفوظ کی جائے گی۔ رائے ونڈ میں ن لیگ کی مرکزی نائب صدر مریم نواز اور دیگر لیگی رہنماؤں سے ملاقات کے بعد ذرائع ابلاغ سے بات چیت کرتے ہوئے پی ڈی ایم کے صدر مولانا فضل الرحمان ںے بتایا کہ ن لیگ کے مرکزی سیکریٹری جنرل احسن اقبال کو دوسری جماعتوں سے رابطے کا ٹاسک دے دیا ہے۔ اس موقع پر ن لیگ کے قائد میاں نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز اور سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے مولانا فضل الرحمان کی جاتی امرا آمد پر شکریہ ادا کیا۔ ذرائع کے مطابق مولانا فضل الرحمان نے اس موقع پر کہا کہ پی ڈی ایم کے پلیٹ فارم پر ہم سب جمع ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت دو سال میں مکمل ناکام ثابت ہوئی ہے جس کی وجہ سے ملک میں مہنگائی عروج پر ہے اور لوگوں کے لیے دو وقت کی روٹی کھانا مشکل ہو گیا ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.