اگر مرد کے بچے ہیں تو ہم سے مقابلہ کرو ۔۔۔فوج کے خلاف زہر اگلنے والے نواز شریف کو یہ پیغام کس سے بھجوا دیا؟ دنگ کر ڈالنے والی تفصیلات

لاہور(ویب ڈیسک)وزیراعظم کے معاون خصوصی شہبازگل نے کہاہے کہ ہمیں نوازشریف سے کوئی سیاسی خطرہ نہیں ،نوازشریف جب پھنستے ہیں توان کو جمہوریت کا چیمپئن بننا یاد آجاتا ہے،نواز شریف نے صرف ایک بات طے کرنی ہے ان کا پیسہ پکڑا گیا جو ان کو دینا پڑے گا، مرد کے بچے ہیں تو ہم سے مقابلہ کریں،

فوج پر مت بولیں ،ہم فوج کیساتھ ملکر کام کر سکتے ہیں توآپ کو کیا موت پڑی ہوتی ہے؟نوازشریف کو اللہ نے سچ بولنے کی توفیق ہی نہیں دی ،نوازشریف تبھی سچ بولتے ہیں جب وہ کچھ نہیں بولتے ۔وزیراعظم کے معاون خصوصی شہبازگل پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہاکہ ہمیں نوازشریف سے کوئی سیاسی خطرہ نہیں ،حالیہ دنوں میں ن لیگ کے قائد کی تقریریں سنیں،میراموقف تھانوازشریف کو تقریر نہ کرنے دی جائے ، ان کو پتہ ہے کہ فوج کمزور ہوگی تو پاکستان کمزور ہو گا، ان کے ایکسپرٹس نے کہاپاکستان کو توڑنا ہے تو فوج کیخلاف بغاوت کراﺅ ،پاکستان کوتوڑے بغیربھارت کو چین نہیں آرہا،ان کے دفاعی تجزیہ کار کہہ رہے ہیں پاکستان کو فوج کو متنازع بنایا جائے ، نوازشریف کے بیان کو ملک دشمن عناصر اپنے مذموم مقاصد کیلئے استعمال کریں گے ،مخالف چاہتا ہے پاکستان کے عسکری اداروں کو متنازع بنا کر اسے کمزور کرے،اللہ کے فضل و کرم سے ملک میں فرقہ وارانہ فسادات کی کوشش کوناکام بنایا گیا۔شہباز گل نے کہاکہ کوئی شک نہیں بھارت سرحدوں پر پاکستان کیخلاف سرگرم ہے، نوازشریف کو تقریرکی شروع دن سے اجازت نہیں ہونی چاہئے تھی ، نوازشریف کی تقریروں کا اثر آنے والے دنوں میں سامنے آئے گا،انہوں نے کہاکہ شہبازشریف کے بیان حلفی پر نوازشریف ملک سے بھاگے ، شہبازشریف نے تحریری طور پر کہا4ہفتے میں نوازشریف واپس آجائیں گے ، شہبازشریف کو مریم نواز نے آہنی ہاتھوں سے پیچھے ہٹا دیا، ن لیگ آج ”سازشی“ لیگ بن گئی اور اداروں کیخلاف بول رہی ہے۔وزیراعظم کے معاون خصوصی نے کہاکہ نوازشریف کاہمیشہ فوج سے ہی مسئلہ کیوں بنتا ہے؟،فوج کیساتھ ان کا مسئلہ یہ ہے یہ امیرالمومنین بننا چاہتے ہیں

،صرف ایک ادارہ ہے جوان کی چوری پر سوال پوچھتا ہے، ان سے سوال ہوتا ہے تو تب ان کو فوج سے تکلیف ہوتی ہے،میں نوازشریف کو ملک مخالف نہیں کہہ رہا۔انہوں نے کہاکہ جندال صاحب بہت دفعہ پاکستان آئے اور بغیر ویزے نوازشریف سے مری میں ملے ، پاکستانی بزنس مینوں سے پوچھتا ہوں بغیر ویزے بھارت جاکر کوئی بھارتی وزیراعظم سے ملاہے؟، نوازشریف نے بھارت میں حریت رہنماﺅں سے ملنے سے انکارکیا، جندال نے کہاکہ سیاستدان اکٹھا ہونے کی کوشش کرتے ہیں تو پاکستانی ایجنسیاں اٹیک کرا دیتی ہیں ،یہ وہ لائن ہے جونوازشریف کے آقا لکھتے ہیں اور وہ بولتے ہیں۔شہباز گل نے کہاکہ کلبھوشن یادیو کی وجہ سے عاصم سلیم باجوہ نوازشریف کو چبھتے ہیں ،نوازشریف اور ان کے ساتھیوں کی ہمت نہیں تھی کلبھوشن کی گرفتاری کا اعتراف کرلیتے ، نوازشریف کے منہ سے تو کلبھوشن یادیو کا نام نہیں نکلتاتھا،نوازشریف اورنریندرمودی کھٹمنڈو میں خفیہ ملاقاتیں کرتے رہے ،انہوں نے کہاکہ نوازشریف کی غداری کو کھول کر تسنیم اسلم نے ان کے منہ پر تھپڑمارا، مودی نے خود کہانوازشریف ہم سے ملناچاہتے تھے مگر پاکستانی فوج ملنے نہیں دیتی ،جندال نوازشریف کا ماما لگتا تھا جو انکومری لے کر گئے ۔شہباز گل نے کہا کہ جندال ایک بھارتی کاروباری ہے جو بغیر ویزے میں نوازشریف سے ملتا رہا، کیاہماراکوئی کاروباری فرد بغیر ویزے کے نریندر مودی سے ملاقات کرسکتا ہے،نوازشریف نے بھارتی دورے میں حریت رہنماﺅں کے بجائے بھارتی اسٹیبلشمنٹ کو ترجیح دی ،انہوں نے کہاکہ فوج ہمیں کہیں کام کرنے سے نہیں روکتی ،نوازشریف نے مودی کی بھیجی پگڑی پہن کر پیغام دیا دونوں کی عزت سانجھی ہے ۔معاون خصوصی نے کہاکہ ،فوج ہمارے ملک میں امن کی ضمانت ہے ،ہماری فوج ہمیں کہیں کام کرنے سے نہیں روکتی ،فوج کیساتھ ملکرہم نے کورونا کیخلاف کامیابی حاصل کی،انہوں نے کہاکہ نوازشریف کو اداکاری کرنی چاہئے تھی اس میں زیادہ پیسہ کماتے ،نوازشریف جب پھنستے ہیں توان کو جمہوریت کا چیمپئن بننا یاد آجاتا ہے،نواز شریف نے صرف ایک بات طے کرنی ہے ان کا پیسہ پکڑا گیا جو ان کو دینا پڑے گا، مرد کے بچے ہیں تو ہم سے مقابلہ کریں،فوج پر مت بولیں ،ہم فوج کیساتھ ملکر کام کر سکتے ہیں توآپ کو کیا موت پڑی ہوتی ہے؟نوازشریف کو اللہ نے سچ بولنے کی توفیق ہی نہیں دی ،نوازشریف تبھی سچ بولتے ہیں جب وہ کچھ نہیں بولتے ۔شہبازگل نے کہاکہ ایٹمی بلاسٹ کس نے کئے، ڈاکٹر عبدالقدیر خان نے ان کا کچا چٹھا کھول چکے ہیں ۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.